PDA

View Full Version : غیر یقینی پاکستانی ٹیم



saima naaz
22nd March 2016, 04:36 PM
روحہ ندیم



ہم سب کو لفظ ناقابلِ پیشگوئی بہت پسند ہے۔ اور ایسا ہونا بھی چاہیے، کیونکہ ہمارے کھلاڑی یا تو جیتا ہوا میچ ہار جاتے ہیں یا پھر ہارے ہوئے میچ کو شاندار جیت میں بدل دیتے ہیں۔
جو بھی ہو، پاکستانی ٹیم کے اس غیر یقینی پن کی وجہ سے میں ہمیشہ اپنے دوستوں اور گھر والوں کے ساتھ دفاعی انداز میں بحث کرتی ہوں۔
بطور مداح ہمیں ہمیشہ سے یہ ہقین ہے کہ ٹیم آخری منٹ میں جادوئی اسپیل سے کھیل کا پانسہ پلٹ دے گی۔
کم از کم پاکستان ٹیم کی ایشیا کپ 2016 میں خراب کارکردگی کے بعد تو اس نفسیات کا خاتمہ ہوجانا چاہیے۔
اس بات سے میرا دل دکھتا ضرور ہے مگر ہماری ٹیم اس قدر کمزور ہوچکی ہے کہ ٹیم کا کپتان اور اسٹار کھلاڑی ہی اس ٹیم پر سب سے بڑا بوجھ نظر آتا ہے۔
یہ بات سچ ہے کہ شاہد آفریدی نے ملک اور ہماری کرکٹ کے لیے بہت کچھ کیا ہے مگر اس کا صلہ بھی ہم ایک حد تک ہی دے سکتے ہیں۔
آپ کہیں گے کہ وہ ٹی20 انٹرنیشنل میں سب سے زیادہ وکٹیں لے چکے ہیں؛ اور انہوں نے بطور کپتان سب سے زیادہ کیچ پکڑے ہیں۔ اب ان کی خراب قیادت اور ٹیم کو مشکلات سے نکالنے میں ناکامی کے دفاع کے لیے ان گھسے پٹے اعداد و شمار کو بار بار دہرانا بند کر دیں۔
شاہد آفریدی کی ٹی20 میں اوسط 17.77 ہے۔ وہ کافی تعداد میں (اور جذباتی) مداح رکھتے ہیں جن میں سے ایک میں بھی ہوں، لیکن اس وقت ہمیں بیٹھ کر یہ سوچنا ہوگا کہ آخری بار کب انہوں نے لڑکھڑاہٹ کے شکار بیٹنگ آرڈر کو سنبھالا تھا۔
آفریدی کے ساتھ جڑے جذبات کی وجہ سے اچھے خاصے لوگ حقائق پر مبنی دلائل کو ایک طرف رکھ دیتے ہیں؛ اب وقت آچکا ہے کہ ہم اس رویے کو بدلیں۔
ایک دور تھا جب وہ بطور باؤلر بلاشبہ میچ جتوانے والے کھلاڑی تھے۔ مگر بدقسمتی سے وہ یہ معیار بہت پہلے ہی کھو چکے ہیں۔


8308