PDA

View Full Version : میر ترین معیشت کی دنیا ۔۔۔! - Tiyaba Zia - 26th May 2012



mubasshar
26th May 2012, 10:45 AM
بھارتی وزیراعظم منموہن سنگھ نے ایک تقریب سے خطاب کے دوران کہا کہ ہندوستان دنیا کی دوسری تیز رفتار ترین معیشت ہے مگر انہوں نے اس حقیقت کا بھی اعتراف کیا کہ ہندوستان میں غیر یقینی حالات پائے جاتے ہیں۔ سرکار کا کہنا ہے کہ وزراءاور سرکاری عہدیداروں کے بیرون ملک دوروں کے اخراجات میں کمی، فائیو سٹار ہوٹلوں میں اجلاسوں کے انعقاد میں تخفیف اور سیمیناروں کے بجٹ میں دس فیصد کمی کی جائے گی کیونکہ ملک کی معاشی صورتحال سنگین ہو رہی ہے۔ مختلف سکیموں کے لئے مختص کی جانے والی رقم میں بھی کمی کی جائے گی۔ کفایت شعاری کی مہم پر سنجیدگی کے ساتھ غور کیا جا رہا ہے حالانکہ منموہن سنگھ خود ہمیشہ ایک ہی لباس میں دکھائی دیتے ہیں اور ان کی بیگم کی ساڑھی بھی (امیر ریاست پاکستان) کی بیگم یوسف رضا گیلانی سے کم قیمت کی ہوتی ہے۔ بھارتی سرکار امریکہ کے سامنے دُم ہلانے کے بھی خلاف ہے۔ امریکہ کے دباﺅ میں آ کر ایران سے تیل کی درآمد کم کرنے کی کھلی مخالفت کی۔ اس کو ہندوستان کے داخلی امور میں صریح مداخلت قرار دیا گیا۔ بدعنوانی کی روک تھام کے لئے بھی سخت اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔ دہلی کی ایک عدالت نے ایک عہدیدار کو ایک ہزار روپے رشوت لینے کے جرم میں تین سال کی سزائے قید اور پچاس ہزار روپے جرمانہ عائد کیا۔ یہ فیصلہ سُناتے ہوئے عدالت نے کہا کہ ملزم یہ کس طرح سوچ سکتا ہے کہ اس نے اگر معمولی رقم بطور رشوت طلب کی ہے تو اس کی سزا بھی معمولی ہو گی۔ رشوت لینے والا شاید یہ بھول جاتا ہے کہ جس وقت اسے رنگے ہاتھوں پکڑا گیا وہ ان مواقع میں سے ایک موقع تھا جب اس نے اس سے پہلے بھی متعدد بار رشوت وصول کی ہو گی اور صرف وہ دن اس کے لئے منحوس ثابت ہوا جب اسے رنگے ہاتھوں پکڑا گیا۔ بدعنوانی ایک ایسا زہر ہے جو خون میں سرایت کر جاتا ہے اور اس کے بعد رشوت خوری کی عادت پڑ جاتی ہے۔ بھارت میں بڑھتی ہوئی بدعنوانی کے علاوہ مہنگائی بھی روز بروز بڑھتی جا رہی ہے۔ اس ملک میں پٹرول کی قیمتوں میں تشویشناک اضافہ ہو گیا ہے۔ نئی قیمت 73.18 ہو گئی ہے۔ وزیر تیل نے کہا کہ روپے کی قیمت میں کمی واقع ہونے کی وجہ سے ایندھن کی قیمتوں میں فوری اضافہ ناگزیر ہو گیا تھا۔ پکوان گیس کی قیمتوں میں بھی گذشتہ سال اضافہ کر دیا گیا۔ اگر روپے کی قیمت میں امریکی ڈالر کے مقابلے میں بدستور کمی واقع ہوئی تو تیل کمپنیوں کو کروڑوں کا نقصان ہو گا۔ انڈین آئل کمپنی، بھارت پٹرولیم اور ہندوستان پٹرولیم کو 4651 کروڑ روپے نقصان ہو چکا ہے لیکن بھارتی عوام سرکار کے جواز سُننے کو تیار نہیں اور چیخ چیخ کر پکار رہے ہیںکہ پٹرول پمپس پٹرول فروخت کر رہے ہیں یا سونا کئی شہریوں نے فیصلہ کیا ہے کہ وہ گاڑیاں اور موٹر سائیکل استعمال کرنا ترک کر دیں گے اور پبلک ٹرانسپورٹ پر سفر کریں گے۔ ایک بھارتی صحافی نے کہا کہ بھارت میں ہر چیز کی قیمتیں اب بم بن جائیںگی جو کسی بھی وقت دھماکے سے پھٹ سکتا ہے۔ بھارتی عوام سرکار کو تنبیہ کر رہے ہیں کہ مہنگائی اور پٹرول کی قیمتوں پر قابو نہ پایا گیا تو انتخابات میں عوام انہیں سبق سکھائیں گے۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ ایسا لگتا ہے کہ ہندوستانی روپے کو کسی کی نظر لگ گئی ہے۔ درآمد کنندوں کی جانب سے خصوصی طور پر تیل ریفائزس کی جانب سے ڈالر کی زبردست طلب کے بعد یہ گراوٹ رونما ہوئی ہے۔ بھارتی عوام کے پاس ووٹ کی طاقت ہے اور وہ اس کا استعمال بھی جانتے ہیں۔ تجزیہ نگاروں کا کہنا ہے کہ پٹرول اور دیگر اشیاءکی قیمتوں میں کمی نہ کی گئی تو حکمرانوں کو اقتدار سے محروم ہونا پڑے گا۔ کانگریس پارٹی نے عام آدمی کا ساتھ دینے کا نعرہ دے کر غریبوں کے ساتھ بہت بڑا مذاق کیا ہے۔ بھارت جیسے امیر ملک میںضیعف العمری کی پنشن 200 روپے ماہانہ ہے۔ اس مہنگائی کے دور میں یہ قلیل رقم بوڑھوں کو گالی دینے کے مترادف ہے۔ جب عام شہری کی جیب پر حکومت ڈاکہ ڈالتی ہے تو انتخابات میں ناکامی کی صورت میں اس کی سزا بھی اسے ملے گی۔ ایک بھارتی اخبار لکھتا ہے کہ ہندوستانی معیشت پر کامل یقین رکھنے والے پرناب مکر جی اور ماہر معاشیات سے سیاستدان بننے والے منموہن سنگھ نے اپنی حکمرانی کی کارکردگی کے ذریعہ عوام کو یہ بتا دیا کہ دھوکہ اورفریب کس چیز کا نام ہے۔ دنیا کی دوسری تیز رفتار ترین معیشت میں جہاں لوگ بھوک اور مہنگائی کے ہاتھوں مر رہے ہیں وہاں مسلمان آج بھی اپنی مذہبی آزادی کی لڑائی لڑ رہے ہیں۔ ایک بھارتی اخبار لکھتا ہے کہ تقسیم ہند کے بعد بھارتی پنجاب کے بیشتر حکمران یا تو پاکستان ہجرت کر گئے یا انہیں مار دیا گیا۔ ریاست پنجاب میں مسلمانوں کے مدارس، مساجد اور دیگر املاک پر مقامی ہندوﺅں نے قبضہ کر لیا تھا، متعدد مساجد کو گردواروںمیں تبدیل کر دیاگیا گو کہ مسلمانوں نے مقبوضہ مساجد کے معاملات میں کافی حد تک کامیابی حاصل کی مگر مایوس کن بات یہ ہے کہ عدالتی فیصلوں کے باوجود مسلمانوں نے غیر قانونی طور پر قابض ہندوﺅں سے اپنی املاک کو ہنوز حاصل نہیں کیا۔ مسلمان جب بھی منہدم مساجد کو دوبارہ تعمیر کرنے لگتے ہیں، قابض ہندو انہیں دھمکا ڈرا کر تعمیر کا کام رکوا دیتے ہیں۔ امیر ترین ہندوستان میں اگر کوئی شعبہ تیز رفتاری میں کامیاب ہے تو وہ بالی وڈ ہے۔ بالی وڈ کی شوبز دنیا میں جو جتنا زیادہ ننگا ہے اتنا بڑا فنکار ہے۔ دولت اور شہرت کی ریل پیل ہے، یہی وجہ ہے کہ پاکستان کی شوبز کی دنیا بھی سرحد پار جانے کے لئے بے تاب ہے، اس کے لئے خواہ وینا ملک ہی کیوں نہ بننا پڑے۔ پاک بھارت تعلقات میںدو عوامل بہت اہمیت کے حامل ہیں اول عریاں کلچر کی تجارت اور دوم اقدار کی سودا بازی۔ امیر ترین بھارت کے غریب ترین عوام جب پاکستانیوں سے ملتے ہیں تو حیرت سے ان کے منہ کھلے کے کھلے رہ جاتے ہیں کہ ہائیں ۔۔۔ تم لوگ غربت میں بھی نواب زادے ہو اور ہم بڑے فخر سے کہتے ہیں کہ پاکستان میں لکھن تو نہیں مگر وہاں ہر گھر میں نواب رہتے ہیں۔