India accused of using child labor for Commonwealth Games


نئی دہلی میں کامن ویلتھ گیمز کے انعقاد کے انتظامات کو *تمی شکل دینے میں معصوم بچوں سے بھی مشقت لی جا رہی ہے جبکہ منتظمین نے ان الزامات کو سرے سے مسترد کر دیا ہے۔


انسانی *قوق کے ت*فظ کے لئے کام کرنے والی متعدد بین الاقوامی تنظیموں کا کہنا ہے کہ نئی دہلی کے *سن و نکھار کے لئے وہاں شجر کاری سمیت متعدد دیگر کاموں میں بچے اپنے والدین کے ہمراہ مشقت کرتے دکھائی دے رہے ہیں۔ مزدوری کرنے والے یہ بچے فٹ پاتھوں کی مرمت جیسے انتہائی مشقت کے کام میں بھی مصروف نظر آتے ہیں۔

نئی دہلی میں چائلڈ لیبر کے مسئلے کو عالمی توجہ اس وقت *اصل ہوئی، جب برطانوی اخبار ٹیلی گراف نے اپنے صف*ہء اول پر وہاں ایک بچےکو مشقت کرتے ہوئے دکھایا۔ اس تصویر میں دکھائی دینے والا بچہ نئی دہلی کے ایک مرکزی سٹیڈیم میں نشستوں کی مرمت کے کام میں مصروف تھا۔ برطانوی اخبار ٹیلی گراف نے اس بچے کی عمر بیان نہیں کی۔

نئی دہلی میں *کام کا موقف ہےکہ تصویر میں دکھایا جانے والا بچہ دراصل ایک نوجوان ہے۔ دوسری جانب *کام کا یہ بھی کہنا ہے کہ یہ تصویر سٹیڈیم میں کس طر* لی گئی جبکہ وہاں اس وقت ص*افیوں کا داخلہ ممنوع ہے۔



Source:
http://www.dw-world.de/dw/article/0,,6044073,00.html