Indian Movie Attack of 26/11 Ban in UAE - Muhammad Mussadique - 4th March 2013

قدرت کے قوانین اٹل ہیں اور حقائق کسی صورت میں بھی چھپائے نہیں جا سکتے بالآخر فرعون کی لاش نیل کی تہہ سے اٹھ کر اوپر آ جاتی ہے اور دنیا کیلئے عبرت کا مقام بن جاتی ہے۔بھارت نے بھی ایک وقت تک نہ صرف پاکستان بلکہ دنیا کو بھی بیوقوف بنا کر رکھا اور اپنے پورے وسائل اور دوستوں کے تعاون سے پاکستان کو ایک دہشت گرد ملک ثابت کرنے کی کوشش کی جس کی وجہ سے پاکستان کو اقتصادی میدان میں بہت نقصان اٹھانا پڑا۔ یورپی یونین نے رعائتیں دینے کی بات کی تو جس بھارت کو ہمارے ناکام حکمران پسندیدہ ملک کا درجہ دلوانے کی سرتوڑ کوشش کر بیٹھے ہیں اسی بھارت نے بنگلہ دیش کو اپنے ساتھ ملا کر یورپی یونین کو کچھ عرصہ کیلئے پاکستان کو رعائتیں دینے کا مسئلہ التوا میں رکھا۔ لیکن بالآخر جیت پاکستان کی ہوئی۔
اب تازہ ترین واقعہ یہ پیش آیا ہے کہ بھارت نے ماضی کی طرح فلموں کے ذریعہ بھی پاکستان کے خلاف معاندانہ پروپیگنڈہ کا سلسلہ جاری رکھتے ہوئے ممبئی حملوں پر ایک نئی فلم بنائی ہے جس کا نام ہے اٹیک آف 26/11۔ دوسری فلموں کی طرح جب اس کی نمائش کا سرٹیفکیٹ متحدہ عرب امارات سے حاصل کرنے کی کوشش کی تو وہاں کی سینسر اتھارٹی نے اعتراض کر دیا کہ فلم پاکستان کے خلاف ہے۔ اس پر ڈسٹری بیوٹر نے یقین دلایا کہ وہ ناپسندیدہ مناظر نکال دیں گے۔ چنانچہ جب تھوڑی سی ایڈیٹنگ کے بعد فلم دوبارہ پیش کی گئی تو متحدہ امارات کی فلم سینسر اتھارٹی نے کورا سا جواب دیتے ہوئے فلم پر مکمل پابندی لگا دی کچھ دوسرے اسلامی ممالک نے بھی اس کی نمائش پر پابندی لگا دی ہے لیکن مشرق وسطیٰ کے دو تین ممالک نے فی الحال پابندی نہیں لگائی ہے۔
پاکستانی دفتر خارجہ کو اپنے ذرائع سے تمام ممالک خصوصاً O.I.C کو چٹھی لکھنی چاہئے کہ وہ اس فلم کی نمائش کی اجازت کسی مسلمان ملک میں نہ دے۔ اب یہ ہماری فلم انڈسٹری کی بدقسمتی ہے کہ صرف چند لالچی لوگوں کی وجہ سے فلم انڈسٹری کو برے دن دیکھنے پڑ رہے ہیں۔ ورنہ پہلے پاکستانی فلموں میں اتنی جان تھی کہ وہ پاکستان کے خلاف بننے والی بھارتی فلموں کا دندان شکن جواب دیتے تھے۔ اس سلسلہ کی آخری فلم شہزاد گل نے بنائی تھی جس نے بھارت کی بولتی بند کر دی تھی۔
اس وقت اگر شہزاد گل سے کوئی مقتدر شخصیت فلم بنانے کا کہے تو وہ ثابت کر سکتا ہے کہ ممبئی کے حملوں میں ممبئی کے انڈر ورلڈ کا ہاتھ ہے کیونکہ جس پولیس انسپکٹر نے ممبئی کے انڈر ورلڈ کو ہلا کر رکھ دیا تھا اسے قتل کرنے میں پاکستان کی کیا دلچسپی ہو سکتی ہے اور یہی ایک کردار کے گرد پوری فلم کا تانا بانا بُنا جا سکتا ہے۔
ویسے بھارت کے بُرے دن آ رہے ہیں پوری دنیا میں اس کے پاکستان مخالف پروپیگنڈہ کی قلعی اتر رہی ہے۔ انڈیا کے وزیر داخلہ شندے نے شدید ترین احتجاج کے باوجود اپنا بیان واپس لینے سے انکار کر دیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ بھارتی جنتا پارٹی اور راشٹریہ سیوک سنگھ کی جماعتوں نے انتہا پسند ہندوں کی تربیت کیلئے باقاعدہ کیمپ قائم کئے ہوئے ہیں۔ اب رہی سہی کسر امریکہ کے نئے وزیر دفاع ہیگل کے بیان سے پوری ہو گئی ہے۔ امریکی وزیر دفاع نے دو سال پہلے اپنے لیکچر میںصاف صاف کہا تھا کہ بھارت پاکستان میں تخریب کاری کراتا ہے۔ اس بات پر انڈین میڈیا میں بہت لے دے ہو رہی ہے۔ جبکہ حقیقت حال تو نکسن اپنی کتاب میں بھی کھلے لفظوں میں لکھ چکے ہیں۔ اسلئے بھارت کو پسندیدہ ملک قرار دینے کا باب ہمیشہ کیلئے بند کر دیا جائے اگر کسی کو اتنا ہی شوق ہے تو بھارت چلا جائے۔