Rawalpindi Tension Continues : Extension in curfew for 24 hours Islamabad roads are also closed



راولپنڈی (دنیا نیوز)سانحہ کے بعد راولپنڈی میں نافذ کرفیو میں مزید 24 گھنٹے کی توسیع کے بعد شہر میں امن و امان کی صورتحال کو بہتر بنانے کے لیے فوج اور قانون نافذ کرنیوالے اداروں کا گشت جاری ہے،نقص امن کے خدشے کے پیش نظر اسلام آباد کے راستے بھی سیل کر دیئے گئے ہیں ، ہنگامہ آرائی میں ہلاک ہونیوالے افراد کی نماز جنازہ دن دو بجے ادا کی جائے گی۔

امن و امان کی صورتحال برقرار رکھنے کے لیے راولپنڈی کے علاوہ اسلام آباد کے داخلی و خارجی راستوں کو جڑواں شہروں کی مشترکہ پولیس کی جانب سےنقص امن کے خدشہ کے پیش نظر اسلام آباد کے راستے سیل کر دیئے گئے ہیں ، مری سے اسلام آباد آنے والا راستہ بھی فیض آباد کے قریب کنٹینر لگا کر سیل کیا گیا ہے۔راولپنڈی شہر میں ڈبل سواری پر پابندی برقرار ہے۔دفعہ 144 کے تحت جلسے جلوسوں پر بھی پابندی ہے، شہر بھر میں مساجد اور امام بارگاہوں پر سیکورٹی تعینات ہے، مساجد سے لوگوں کو گھروں میں رہنے کی ہدایت کے لیے اعلانات بھی جاری ہیں ،دوسری جانب رات بھر کرفیو کی خلاف ورزی پر درجن بھر سے زائد افراد کو حراست میں بھی لیا گیا، کرفیو کے دوران راولپنڈی کے بعض علاقوں میں فائرنگ کی آوازیں بھی سنی گئی ہیں، سٹی صدر روڈ پر جلوس کی شکل میں آنے والے افراد کو منتشر کرنے کے لیے شیلنگ بھی کی گئی۔کرفیو کے باعث شہریوں کو اشیائے خوردونوش کی قلت کا سامنا بھی ہے۔ہسپتالوں میں ایمرجنسی تو نافذ ہے تاہم مریض کرفیو کے باعث ہسپتالوں میں نہیں پہنچ پا رہے،ہنگامہ آرائی میں ہلاک ہونیوالے افراد کی نماز جنازہ دن 2 ادا کی جائے گی۔انتظامیہ نے ٹیکسلا سے 12 محرم کی مناسبت سے نکلنے والے جلوس کو بھی منسوخ کر دیا ہے۔